خطرے کی گھنٹی بج گئی….

امریکہ کی افغانستان میں خطرناک شکست ہو چکی ھے

بھارت امریکہ کے کہنے پر چل کر ایک ایسی دلدل میں پھنس گیا ھے جہاں سے واپسی ناممکن ہے سوائے موت کے۔


امریکا چاہتا ہے کسی طرح پاکستان بھارت کی جنگ ہو جائےیہ دونوں ملک چاہے برباد ہوجائیں ایٹمی ہتھیار چلا دے اربوں لوگ موت کے منہ میں چلے جائیں امریکہ کو کوئی پرواہ نہیں امریکہ چاہتا ہے دنیا کا رخ پاکستان اور بھارت کی طرف لگ جائے اور امریکہ افغانستان سے شکست کے الزام لگے بغیر فرار ھو جائے۔

اور بھارت کو پتا ہے جب امریکہ نہیں ٹھہر سکا پاکستان کے کے سامنے تو میں کس کھیت کی مولی ہوں بھارت کو یہ بھی پتہ ہے کہ امریکہ کے جانے کے بعد کچھ ہی مہینوں میں بھارت کی پوری آرمی کو نیست ونابود کردیا جائے گا.

بھارت کا اپنا مفاد ھے بھارت چاہتا ھے پاکستان کسی طرح سے کھلی جنگ کی طرف آ جائے تاکہ اسرائیل اور امریکہ کی مدد سے پاکستان کو ہمیشہ ہمیشہ کے لئے مٹا دیا جائے ۔

اور اسرائیل تو ویسے ہی موقع کی تلاش میں رہتا ہے پاکستان کے خلاف اسرائیل کو پتہ ہے پوری دنیا میں اگر اسرائیل کے لئے خطرے کی گھنٹی ہے تو وہ پاکستان ھے

دوسری طرف افغان آرمی کو پتا ہے امریکہ جانے کے بعد وہ ایک مہینہ بھی نہیں ٹھہر سکیں گے لہذا وہ چاہتے ہیں کسی بھی صورت امریکہ یہاں سے نہ جائے۔ اور ہمارے ہاں اندر کے غدار سیاسی انتقام کی آگ میں جلنے والے جن کو بہت پہلے بلیک واٹر سی آئی اے را موساد نے اپنے مقصد کے لیے تیار کر رکھا تھا لیکن وقت سے پہلے ہی آئی۔ایس۔آئی نے ان سب ایجنٹوں کو ان کی اوقات دکھا دی۔ امید کرتا ھوں جن سیاسی غداروں کا نام لیا ہے میں نے آپ سمجھ گئے ہونگے۔

مقبوضہ کشمیر میں تو بھارت نے 70 سالوں سے قبضہ کر رکھا تھا لیکن گزشتہ چھ مہینے سے جو مقبوضہ کشمیر میں سلسلہ شروع ہوا ہے اس سب کی کڑیاں اوپر جو میں نے بیان کیا ہے امریکہ سے اسرائیل سے جا کر ملتی ہیں

امید کرتا ہوں آپ ساری گیم سمجھ گئے ہونگے

اس دوران پاکستان نے یہ سارے معاملات اور دشمنوں کی ساری گیم کو بھانپ لیا تھا اور پاکستان اندر ہی اندر خاموشی سے اپنی تیاری کرنے لگ گیا۔ جب پاکستان نے بیلیسٹک میزائل کا تجربہ کر کے دنیا کو اور خاص طور پر دشمنوں امریکہ،اسرائیل،بھارت کو للکار دیا اسے ملٹری کی زبان میں خطرناک دھمکی کہا جاتا ھے اگر کوشش کی تو سیدھے مارے جاوّ گے۔

امریکہ سمجھ رہا تھا کہ پاکستان ڈر جائے گا ،خوفزدہ ہوجائے گا اور وہ افغانستان کے اندر خاموشی سے اپنا شیطانی کام کرتا رہے گا اور بھارت کے ذریعے پاکستان پر پریشر اور شیطانی ایجنڈے مسلط کر کے پاکستان کو اندر ہی اندر سے کھوکھلا کر دیا جائے گا امریکہ سمجھ رہا تھا کہ پاکستان کو نہیں پتہ کہ بھارت کے پیچھے امریکہ ھے لیکن پاکستان رشتے میں ان کا باپ لگتا ہے پاکستان نے وقت سے پہلے امریکہ کو گردن سے دبوچ لیا ھے۔

پاکستان نے دشمنوں کو خاص پیغام دے دیا ہے کہ اگر پاکستان نہیں تو پھر دنیا کا کوئی ملک بھی صفحہ ہستی میں نہیں رھے گا۔

دشمن براہ راست حملہ کرنے کی ہمت نہیں کر سکتا دشمن کو پتہ ہے پاکستان کے پاس دنیا کی بہترین میزائل ٹیکنالوجی ایٹم بم اور دیگر خطرناک ہتھیار ہائیڈروجن بم اور خطرناک جنگ لڑتی ہوئی پاک آرمی جو کہ اس وقت فولادی شکل اختیار کر چکی ہے اور بہت ساری وجوہات ہیں جس بنا پر دشمن براہ راست حملہ نہیں کر سکتے۔ لیکن دشمن پر بھروسا بھی نہیں کرنا چاہئیے.

دشمن کی پوری کوشش ہے کہ کسی طرح پاکستان کے اندر خانہ جنگی ،افراتفری کا ماحول پیدا کر دیا جائے۔ معاشی قتل عام کرایا جائے جس کی نشانیاں ڈالر کا اوپر جانا پاکستان کو قرضہ کی دلدل میں پھنسانا اور سیاسی غداروں کے ذریعے سے لسانیت فرقہ واریت اور قوم پرستی حقوق کے نعروں کی آڑ میں شدید نفرت کا ماحول بنانا جس میں دشمن ایک حد تک کامیاب ہوتا ہوا نظر آیا تھا لیکن پاکستان کے گمنام ہیروز نے اور پاکستان کی عوام نے بروقت دشمن کی تمام سازشوں کو ناکام کر کے اس بیانک سازش کو ناکام کر دیا ھے۔

آب آتے ہیں بھارت اور کشمیر کے معاملے کی طرف بھارت نے اپنا غلیظ چہرہ دنیا کو دکھایا ھے وہ سب کے سامنے ھے

ہم اعلان شورشرابہ نہیں کرتے لیکن ہر محاذ پر ہر پوائنٹ سے دشمن کو ٹارگٹ کیا جائے گا اور خاموشی اختیار کی جائے گی اور مانا بھی نہیں جائے گا۔

بھارت ایسی بند گلی میں داخل ہوچکا ہے کہ بھارت اب کسی کو یہ بھی نہیں کہہ سکتا کہ پاکستان سے بچاؤ پاکستان طاقتور ہے ،پاکستان ہمیں نقصان پہنچا رہا ھے۔

بھارت ایل او سی پر پوری کوشش کر رہا ہے کسی طرح پاکستان غصے میں آئے اور براہ راست جنگ شروع کر دے

لیکن پاکستان ایک جنگی حکمت عملی اور دماغ سے سارے معاملات نپٹا ھے. مقبوضہ کشمیر پہاڑ اور جنگلوں پر مشتمل ایک وادی ہے یہ گوریلا وار کے حساب سے بہت زیادہ زرخیز ہے ہے یہاں جنگلوں میں بھارتی فوج کو ہر سمت سے نشانہ بنایا جارہا ہے،پہاڑوں پر نشانہ بنایا جارہا ہے شہروں میں نشانہ بنایا جارہا ہر طرف سے نشانہ بنایا جارہا ھے بھارت ایسے گندے طریقے سے پھنسا ہے کہ بھارت اب کسی کو بتا بھی نہیں سکتا اور نہ دکھا سکتا ہے نا رو سکتا ہے نہ ھنس سکتا ھے

ہم نے کھلی جنگ بھی نہیں کرنی اور خاموش بھی نہیں بیٹھنا دشمن کو کھلی جنگ سے زیادہ نقصان دینا ہے لیکن زبان سے ایک لفظ نہیں کہنا نہ تکبر کرنا ہے اور نہ کوئی ایسا ثبوت دشمن کو دینا ہے بلکہ ہم نے خاموش رہ کر اپنا کام جاری رکھنا ھے۔ لیکن جہاں ہمارے اسلام ہمارے وطن ہمارے کشمیری بھائیوں کی بات آئے گی وہاں ہم ہر حد تک جائیں گے

اس وقت پوری قوم کو آپس میں اتحاد و اتفاق پیدا کرنا ہوگا اور جذبہ پیدا کرنا ہوگا اور جنگی ٹریننگ ہر پاکستانی کو آتی ہونی چاہیے، ذہنی طور پر پوری قوم تیار رہے پاکستان کا دشمن ایک نہیں بہت سارے ہیں ہم نے غافل نہیں رہنا ہم نے اپنی تیاری مکمل رکھنی ہے کسی بھی حال میں غافل نہیں رہنا۔

مقبوضہ کشمیر کے اندر کے حالات اس وقت یہ ہے کہ جنگلوں میں پہاڑوں میں بھارتی فوجیوں کو ایسے مارا جارہا اگر یہی حال دو مہینے اور مزید رہا تو بھارتی فوج کا مورال بھی گر جائے گا اور بھارتی فوج بھاگنے پر مجبور ہوجائے گی۔لیکن اب بات کشمیر سے بہت آگے چلی گئی ہے کشمیر تو ہے ہی ہمارا وہ ہم بزور طاقت بزور شمشیر اللہ کے حکم سے واپس لے لیں گے۔

لیکن باقی بھارت کو اب نہیں چھوڑنا بھارت کا نام و نشان مٹا دینا ہے بھارت کے ٹکڑے ٹکڑے کر دینے ہیں بھارت کے مسلمانوں کو بھی آزاد کرانا ہے اور خالصتان بھی بنوانا ہے اور دیگر ریاستیں بھی بنوانی ہے بھارت کا وجود ہی مٹا دینا ہے تاکہ بھارت پھر کبھی پاکستان کے خلاف کوئی زہریلی سازش یا کوئی دہشتگردی نہ کر سکے سانپ کو ہمیشہ ہمیشہ کے لئے ختم کر دینا ہی عقلمندی ھے

کچھ باتیں پبلک نہیں کی جاتی آپ کے محافظ ہر وقت ہر لمحہ اپنے اسلام اور وطن کے لیے تیار بیٹھے ہیں۔ اور تیاریاں بھی مکمل کر رکھی ھے

آنے والے دنوں میں افغانستان میں شدید جنگ ہونے جارہی جس میں امریکا اور اس کے اتحادیوں کی رہی سہی قوت بھی جواب دے جائے گا فرار بھی نہی ہونے دیا جائے گا اور مقبوضہ کشمیر کی موت کی وادیوں میں بھارتی فوج کو بھی راکھ کا ڈھیر بنا دیا جارہا ہے۔

اب میں پوری پاکستانی قوم سے کہوں گا کہ اس وقت اپنی پاک فوج کے شانہ بشانہ کھڑے ہوجائیں اپنی پاک فوج کا حوصلہ بنیں پوری قوم کو نظریہ اسلام، نظریہ پاکستان اور جہاد عظیم کا مطلب مفہوم اور اللہ کے رسول کے حکم اور وطن کے لیے اپنی جان دینے اور لینے والا جذبہ پیدا کرنا ہو گا۔