گالی دے لو مولوی نا کہو ۔۔۔

لوگ مولوی کو انسان نہیں سمجھتے ۔میں خود ایسی ہوں ۔اگر کسی مولوی کو کسی شادی پر ناچتے دیکھوں گی تو میرا بھی یہی reaction ہو گا ۔کسی مولوی کو فلم دیکھتے گانا گاتے سیٹی بجاتے ہم سب کو ہی حیرت ہوتی ہے ۔جب ان کو انسان سمجھ کر ساتھ بیٹھنے کی جگہ دی جائے گی وہ ان پین کی سری جیسے سوروں سے محفوظ رہیں گے.


۔پورے معاشرے کے دھتکارے ہوے مولوی کو پھر یہ عفریت اپنے پروں تلے لے لیتے ہیں ۔ان کی جنسی خواہشوں کو حوروں کے لالچ تلے خوب ابھارتے ہیں ۔ان کو کوئی لڑکی تو پسند کرتی نہیں ۔یہ خوابوں کی جنت میں جینا شرو ع کر دیتے ہیں ۔پھر وہ پین کی سری جو بھی آرڈر دیتے ہیں یہ کسی روبوٹ کی طرح امین کہتے ہیں ۔ یہی روبوٹ اگے چل کر ریپ کرتے ہیں۔ بچوں پر تشدد کرتے ہیں ۔بچوں کو اس قدر تکلیف دیتے ہیں کے بچے مر جاتے ہیں .

ہم لوگ ان کی وضح قطع سے از خود فرض کر لیتے ہیں کے یہ تو دین کے رکھوالے ہیں۔ یہ تو مومن ہیں ۔ یہ تو حافظ ہیں ۔ اوہ پاگل لوگو ان کو انسان تو سمجھو ۔ان کی بھی معصوم خواہشیں ہوں گی ، گلی میں گلی ڈنڈا کھیلنے کی ،اسکول میں ڈانس پرفارمنس کرنے کی ، ماں باپ سے چھپ کر فلم دیکھنے کی ، کسی دن اسکول سے بھاگ کر ڈیٹ پر جانے کی ،

اور ما ں باپ نے کیا کیا ؟ بچپن کی معصومیت چھین کر انہیں مدرسوں میں پھینک دیا ۔۔جہاں روٹی بھی تب ملے گی اگر سبق یاد کیا ہو گا ۔ سالن میں بوٹی اس بچے کو ملے گی جس کی زیر زبر سہی ہو گی ۔ دھلے کپڑے اس کو ملیں گے جو مولوی کے پیر دبا ے گا ۔ سیر تفریح تو یہ مدرسے والے افورڈ نہیں کر سکتے تو کیا کرتے ہیں ، حرام ہے یہ

ٹیوی حرام ، میوزک حرام ، اچھا کھانا حرام ، اچھا لباس حرام

اور اس کے توڑ پر ابدی زندگی کا لالچ

ابدی خوشیاں نا ختم ہونے والے مزے

آس پاس لہراتی حور

جنت کے میوے

بھوکا روٹی کی بھوک مردار سے بھی پوری کر لیتا ہے لیکن ہم مجموئی طور پر بھوکوں کی فوج تیار کر رہے ہیں ۔ جو ہر دم گھات لگآ کر بیٹھی رہتی ہے ۔ پھر جس کے ہتھے جو چڑھ جاتا ہے وہ اسی کو نوچ رہا ہے ۔

آپ یہ مت امید کریں ان لوگوں کے پاس تو دین ہے ۔۔اللہ‎ کا قرآن ہے ان کے سینوں میں تو یہ کیوں کر رہے ہیں یہ سب ؟ اس کا مطلب مذہب غلط ہے ۔اسلام رپسٹ پیدا کرتا ہے ۔

اسلام جبر اور ظلم کا دین ہے ۔ وغیرہ وغیرہ

جب ہر فزکس پڑھنے والا سائنس دان نہیں ہوتا ، بیولوجی والا ڈاکٹر نہیں ہوتا ، نفسیات پڑھنے والا ماہر ے نفسیات نہیں ہوتا ، اکنامکس پڑھنے والا ماہر اقتصادیات نہیں ہوتا ، انگلش پڑھنے والا بول نہیں سکتا تو آپ ایک قرآن پڑھنے والے سے کیا امید لگا کر بیٹھے ہیں ؟

آپ گریبان جھانک لیجیے ، 15 سال اسکول اور کولج پھر یونی کی تعلیم کے بعد آپ کو کیا ملتا ہے ؟ لے دے کے جب کوئی زور نہیں چلتا تو ٹیچنگ میں آ جاتے ہیں ۔ 6 سال فزکس میں سیر کھپانے کے بعد کوئی ادارہ جب آپ کو نوکری نہیں دیتا تو آپ کولج میں لیکچرر بھرتی ہو جاتے ہی ، وہ فارمولے اور کلئے جو آپ کے استاد نے آپ کو سکھایا ہوتے ہیں وہی آپ اگے سکھا دیتے ہو ۔کتنی فزکس پڑھنے والوں نے آج تک کوئی ایجاد کی ہے ؟ کسی نے کوئی کلیہ متعارف کروایا ہو ؟ کوئی نیا سیارہ ڈھونڈا ہو ؟

6 سال بائیو پڑھنے والوں نے کوئی نیا جرثومہ ڈھونڈا ہو ؟ کوئی کولوننگ کا طریقہ اختیار کیا ہو ؟

کسی لاء کے طالب علم نے کوئی نیا قانونی فورمولا دنیا کو۔ دیا ہو ؟

جب ہم سب کے جواب نا میں ہیں تو مولوی بھی آپ ہی سے ہے ۔ ہم سب اس نظام کی بدحالی کا شکار ہیں جہاں رٹے لگوا کر ڈگری لینے پر زور ہے ۔ تا کے کوئی اچھی نوکری مل جائے ۔ہم سب لڑ رہے ہیں ، اپنے آپ سے ، آس پاس کے لوگوں سے ، اس معاشرے سے ، اس ملک کے ناقص نظام سے ۔

جو اپنے ہنر کو rapist ، اور ڈکیت بنتے دیکھ کر خاموش ہے ۔

انگلی اٹھایا کریں لیکن تنقید ایسی ہو کے اصلاح ہو ۔۔فتنہ فساد نا ہو ۔ آپ پہلے سے بد حال مولوی کو مزید پست کرنے پر لگے ہیں ۔ تو جلتی اگ پر تیل ڈالنے سے اگ اور بھڑکتی ہے نا کے بجھتی ہے ۔آپ لوگ تو اپنا ہی گھر جلا رہے ہو ۔ اپنے ہی طبقے کو شودر بنا رہے ہو ۔ تو وہ پہنا کے لئے اسی کی پاس جائے گا جو اس کے آنسو صاف کرے گا ۔ آپ آنسو صاف کرنے لگ جاو ، مولوی لفظ گالی نہیں رہے گا ۔۔