بلین ٹری سونامی پروجیکٹ کو 410 ملین روپے کا نقصان

ارغوان پاکستان اسلام آباد سے :- بلین ٹری سونامی پروجیکٹ کو 410 ملین روپے کا نقصان

اسلام آباد (ارغوان نیوز):- خصوصی آڈٹ رپورٹ سے انکشاف ہوا ہے کہ خیبر پختونخواہ (کے پی کے) کے جنگلات کے حکام کی بد انتظامی کے باعث بلین ٹری سونامی پروجیکٹ کو 410ملین روپے سے زیادہ کا نقصان ہوا ہے- آڈیٹر جنرل آف پاکستان (اے جی پی) نے گورنر کے پی کے کے سامنے یہ رپورٹ پیش کی ہے جس میں نقصانات ؛ بے ضابطگیاں؛ بد انتظامی اور اخراجات پر کمزور کنٹرول کے بارے میں حیرت انگیز انکشافات سامنے آئے ہیں- دستیاب رپورٹ کے مطابق جنگلات کے حکام صوبے کے سات غیر ملکی ڈویژنوں میں 36فیصد درختوں کو لگانے کا ہدف حاصل نہیں کرسکے-



محکمانہ نرسریوں میں بیجوں کے زیادہ نرخوں کے دعوے کے بعد بھاری نقصان ہوا – چترال میں 226 ؛ بٹہ گرام میں 109؛ طور غر میں 27ویرہ میں کلوژرز کی بندش سے محکمہ کو 109 ملین روپے کا نقصان ہوا- ۔ قومی احتساب بیورو نے بلین ٹری سونامی پروجیکٹ میں متعدد انکوائریوں اور تحقیقات کی منظوری سے ہفتوں قبل گورنر کے پی کے کے سامنے خصوصی رپورٹ پیش کی تھی- آڈٹ میں مذکورہ بالا رقم کی بازیابی کی سفارش کی گئی ہے اور 25 فروری 2019 کو منعقدہ محکمہ اکاؤنٹس کمیٹی کے اجلاس میں انتظامیہ کو ہدایت کی گئی تھی کہ وہ فیلڈ آفسوں کے ذریعہ محکمہ نرسریوں میں بیجوں کے لئے کی جانے والی زائد ادائیگی کی وصولی کریں-